شیرباز خان مزاری ملکی سیاست میں شرافت اور اصول پسندی کا عملی نمونہ

ممتاز سیاستدان سردار شیرباز خان مزاری ملکی سیاست میں وہ شرافت اور اصول پسندی کا عملی نمونہ تھے۔ ان کی تمام عمر سیاسی سرگرمیوں میں گزری، انھوں نے ایک فعال زندگی گزاری، گوکہ اب پیرانہ سالی کے باعث سیاسی سرگرمیوں سے کنارہ کش ہو گئے تھے۔ شیر باز خان مزاری پنجاب میں آباد روجھان مزاری قبیلے کے سردار تھے، وہ نیشنل ڈیمو کریٹک پارٹی (این ڈی پی) کے بانی تھے، 1970 کے انتخابات میں بطور آزاد امیدوار قومی اسمبلی کے ممبر کے طور پر منتخب ہوئے تھے۔ انھوں نے 1975 سے 1977 تک قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔

انھوں نے 1973 کے آئین کی تیاری اور بعدازاں جمہوریت کی بحالی کی تحریک کے دوران اہم کردار ادا کیا تھا۔ سردار شیرباز مزاری کا شمار محب وطن، دیانت دار، با اصول اور حق گو سیاسی رہنماؤں میں ہوتا تھا۔ انھوں نے ملکی سیاسی صورتحال اور بلوچ قبائل کی تاریخ کے حوالے سے کتابیں بھی تحریر کیں، یعنی وہ ایک محقق اور مصنف بھی تھے اور وسیع مطالعہ کے حامل تھے۔ ایک تعلیم یافتہ، بردبار شخصیت کے حامل سردار شیر باز خان مزاری ہمارے سیاستدانوں کے لیے یقیناً ایک رول ماڈل کی بھی حیثیت رکھتے تھے، دیانت اور شرافت کا پیکر تھے ۔ قومی مسائل کے حل کا ایک واضح اور دوٹوک موقف رکھنے والے سیاستدان تھے۔  جمہوری حقوق کے علمبردار تھے اور جمہور کی فلاح ان کی زندگی کا نصب العین تھا۔

بشکریہ ایکسپریس نیوز

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s